کامیابی اور خودشناسی۔ مگر کیسے؟

کامیابی اور خودشناسی۔ مگر کیسے؟

Aamer Habib TV Reporter

Aamer Habib TV Reporter

کامیابی اور خودشناسی۔ مگر کیسے؟

آپ اپنا وقت کیسے ضا ئع کر رہے ہیں؟ ذرا سوچئے۔

کیا کبھی آپ نے یہ سوچتے ہوئے وقت گزارا کہ آپ کون ہیں؟ کیا کبھی آپ نے اپنا تجزیہ کرنے کی کوشش کی؟کبھی خود کو وقت فراہم کیا یہ جاننے کیلئے کہ آپ کیا بننا چاہتے ہیں اور اس منزل کو پانے کیلئے کون سے اقدامات ضروری ہیں؟پچھلے سال آپ نے وقت کو فضول کہاں کہاں گنوایا جس پر اب آپ کو پچھتاوا ہو رہا ہے؟ تو کیا آپ اب اسے بہتر طریقے سے استعمال میں لانا چاہتے ہیں یا نہیں؟ بہت سے لوگ اپنا وقت بیکار میں ضائع کر دیتے ہیں جس پر بعد میں سوائے افسوس کے کچھ نہیں رہتا۔تو فارغ بیٹھنے سے بہتر ہے کہ اپنے مستقبل کے بارے میں سوچیں کہ جب تک آپ سوچیں گے نہیں تو قدم بھی نہیں اٹھا سکتے ،اور جب قدم نہیں اٹھائیں گے تو پا بھی نہیں سکتے۔ دیر کرنے سے بہتر ابھی خود میں جھانکیں کہ آپ کیا چاہتے ہیں،خود کو پڑھیں۔فیصلہ کر لیں کہ آگے آنے والا ایک بھی لمحہ آپکو ضائع کرنا ہے یا نہیں۔تمام فضولیات اور بے مقصد مصروفیات کو زندگی سے نکال باہر پھینکیں اگر آپ واقعی گمنام نہیں رہنا چاہتے اور ا یسا مقام حاصل کرنا چاہتے ہیں جس پر رشک کیا جا سکے۔یہ آپ پر منحصر ہے کہ آپ اپنی زندگی کو بیکار جانے دیں یا بنا لیں۔ کوئی بھی کامیاب شخص بنا خود کو وقت دیئے ایک ہی جست میں اس مقام پر نہیں پہنچ گیا بلکہ اس نے ایک ایک لمحہ بروئے کار لایا اور وہ پا لیا جسکا وہ خواہشمند تھا۔اب تک آنی والی تمام نسلوں میں سے ہمیں مصروف ترین تصور کیا جاتا ہے مگر ہم کہاں مصروف ہیں، کبھی دھیان دیا؟

حقیقت یہ بھی ہے کہ ساری بات ترجیحات کی ہے ورنہ کوئی بھی مصروف نہیں ہوتا۔یونہی کوئی تخلیق کار نہیں بن جاتا، اسکے لیے سوچ،عمل اور محنت درکار ہے۔ آپ اپنے لیے کتنا وقت گزارتے ہیں؟کیا آپ اپنے خواب کو حقیقت کا روپ نہیں دینا چاہتے؟کیا آپ نے اس مقصد کے لیے اپنی طاقت اور صلاحیت کو بہترین طور پر استعمال میں لانے کا سوچا؟ یہ وقت ہے سوچنے کا!تو پھر آج آپ کیا کرنے جا رہے ہیں؟

Aamer Habib TV Reporter